ممتابنرجی نے بنگال کے عوام کو مرکزی حکومت کی اسکیموں سے محروم کردیا :مودی

0
185

کلکتہ:
وزیر اعظم نریندر مودی نےآج ممتا بنرجی کی سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ممتا بنرجی نے مرکزی اسکیموں سے بنگال کے عوام کو محروم کردیا ہے ۔آج بنگال کے عوام پوچھ رہے ہیں کہ مرکزی حکومت نے جو امداد بھیجی ہے وہ کہا ں ہے ؟۔
وزیر اعظم مودی نے انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بنگال میں مافیائوں کا راج ہے ۔انہوں نے کہا کہ کانگریس ، بائیں محاذ اور ترنمو ل کانگریس نے بنگال کی ترقی کو روک دیا ہے ۔وزیر اعظم نے کہا کہ اگر دیدی یہ سوچتی ہیں کہ اگر وہ مرکزی اسکیموں کو نافذ کریں گی تو لوگ مودی مودی کریں گے۔تو میں دیدی سے کہنا چاہتا ہوں کہ وہ مجھے کریڈٹ نہ دیں مگر غریبوں کو اس سے محروم نہ کریں ۔مودی نے کہا کہ مرکزی حکومت کے تعاون کے باوجود ریاستی حکومت کی غلط پالیسی کی وجہ سے صنعتیں تباہ و برباد ہوگئی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ یہ سب مافیائوں کے راج کی وجہ سے ہورہا ہے ۔بنگال کے مافیائوں کی وجہ سے بنگال کی ترقی کی راہ روک گئی ہے ۔
وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ممتا بنرجی نے عوام کے ساتھ دھوکہ دیا ہے ۔انہوں نے ریاست کی ترقی کی راہ میں روکاوٹ ڈالی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ’’دیدی کو بنگال نے کام کرنے کے لئے 10 سال دیئے ہیں مگر دیدی نے اس کے بدلے میں عوام کو ظلم ، بد انتظامی کا تحفہ دیا ہے ۔بنگال نے کانگریس ، ترنمول کانگریس ، بائیں بازو کو موقع فراہم کیا ہے۔ اگر آپ اس بار بی جے پی کو موقع دیں گے تو ، ہم آپ کو دکھائیں گے کہ حقیقی تبدیلی کیسی ہوتی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ آپ نے کانگریس اور بائیں بازو کی تباہی دیکھی ہے۔ ترنمو ل کانگریس نے آپ کے خوابوں کو برباد کردیا ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بی جے پی بنگال کو ایک روشن مستقبل دے گی۔انہوں نے کہا کہ بنگال کو جن سنگھ کے بانی شیاما پرساد مکھرجی کے خوابوں کے مطابق بنایا جائے گا۔
مودی نے کہا کہ پچھلے 70 سالوں میں آپ نے سب کو مواقع فراہم کیے لیکن ہمیں 5 سال دیں ، ہم بنگال کو 70 سال کی تباہی سے آزاد کریں گے ، ہم آپ کے لئے اپنی جانیں قربان کردیں گے۔ وزیر اعظم نے ممتا بنرجی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ بنگال میں بھتیجے کی حکومت ہے اس کا تانڈوہے۔انہوں نے کہا کہ ممتا بنرجی ووٹ بینک کی سیاست کررہی ہے ۔مودی نے کہا کہ بنگال میں کھیلا نہیں اب ترقی ہوگی۔
اب دیدی کی بھتہ خوری، سنڈیکٹ راج اور انارگی کا دور ختم ہوگا ۔ دیدی کی حکومت قومی تعلیمی پالیسی کو نافذ کرنے سے انکار کر رہی ہے۔ وہ بنگال کے نوجوانوں کے مستقبل کی پرواہ نہیں کرتی ہیں۔ میں آپ سب کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہم دیدی کو بنگال کے نوجوانوں کے مستقبل کے ساتھ کھیلنے کی اجازت نہیں دیں گے۔وزیر اعظم نے کہا کہ بنگال میں لوگوں کی رائے سے پتہ چلتا ہے کہ اس بار ریاست میں بی جے پی برسر اقتدار آرہی ہے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ یہ میرے لئے اعزاز کی بات ہے کہ آپ بی جے پی پر اعتماد کررہے ہیں ۔ مودی نے کہا کہ بی جے پی کی حکومت بننے کے بعد اس خطے میں زراعت ، آبپاشی اور کولڈ اسٹوریج کی سہولیات کو بہتر بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا ، اس کا فائدہ براہ راست خطے میں آلو کے کاشتکاروں کو ہوگا۔ انہوں نے صحت کی سہولیات اور دیہی سڑکوں کو بہتر بنانے کا بھی وعدہ کیا۔
وزیر اعظم نے کہا کہ ہم ہر گھر کو پینے کے صاف پانی کو یقینی بنائیں گے۔ ہم اس خطے کی ہمہ جہت ترقی کے لئے پرعزم ہیں”
انہوں نے کہا کہ جہاں بھی ریاستوں میں بی جے پی کی حکومتیں ہیں ، مرکزی اور بی جے پی حکومتیں “ڈبل انجن کی طاقت سے جنتا-جناردن” کی خدمت میں مصروف ہیں۔ مودی نے کہا ، “ہم سب کا ساتھ، سب کا وکاس اور سب کا وشواس کے منتر کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔
اس سال کے بجٹ میں ، مدنی پور کے لئے ایک وسیع پیمانے پر فراہمی کی گئی ہے۔ ہم خطے میں فشینگ بندرگاہ کو معاشی مرکز میں تبدیل کرنے کے لئے اقدامات کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بی جے پی حکومت کے تحت بنیادی ڈھانچے کو جدید بنایا جائے گا ، کولڈ چین کو بہتر بنایا جائے گا اور ماہی گیری کے شعبے کو فائدہ ہوگا۔میں بنگال کے عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ دیدی کو اب جمہوریت کو کچلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور انتظامیہ کو یہ بھی یاد رکھنا چاہئے کہ آئین اور جمہوریت کی حدود سے زیادہ کوئی چیز نہیں ہے۔ مودی نے الزام عاید کیا کہ صاحب امبیڈکر نے ہمیں ووٹ اور انتخاب کی آزادی دی ہے۔ تاہم ، بنگال میں ، ممتا بنرجی ووٹ ڈالنے کی آپ کی آزادی کو مستقل لوٹ رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ 2018 کے پنچایت انتخابات میں ، پوری دنیا نے ترنمول کانگریس کی طرف سے کی جانے والی دھاندلی کا مشاہدہ کیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ میں بنگال کے لوگوں کو یقین دلاتا ہوں کہ دیدی اب ہماری جمہوریت کو پامال نہیں کرسکیں گے۔”
“مجھے فخر ہے ، بی جے پی کے پاس دلیپ گھوش جیسے آدمی ہیں۔ مسٹر مودی نے مزید کہا کہ انن پر متعدد بار حملہ ہوا ہے ، لیکن انہوں نے کبھی پیچھے نہیں ہٹایا۔”