کنور دانش علی نے رمیش بدھوڑی کے نازیبا تبصرہ پر لوک سبھا اسپیکر کو لکھا خط

ایوان میں بحث کے دوران ہوئے اس واقعہ کو کنو ر دانش علی نے دل توڑنے والا واقعہ قرار دیا

0
47

نئی دہلی ،22ستمبر :

پارلیمنٹ میں بحث کے دوران بہوجن سماج پارٹی کے رکن پارلیمنٹ دانش علی کے خلاف رمیش بدھوڑی کے ذریعہ کئے گئے نازیبا تبصرہ سے نہ صرف مسلمانوں کے دلوں کو چوٹ پہنچی ہے بلکہ اس نے ایوان کے وقار کو بھی مجروح کیا ہے ۔اس سلسلے میں بی ایس پی کے رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے اپنے خلاف نازیبا تبصرہ سے متعلق لوک سبھا اسپیکراوم برلا کو جمعہ کے روز(22 ستمبر) کو خط لکھا ہے۔ انہوں نے اس میں ضابطہ 227 کے تحت معاملے کو خصوصی استحقاق کمیٹی (پریویلیج کمیٹی) کو بھیجے جانے کا مطالبہ کیا۔

اس کے ساتھ ہی بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) لیڈرکنور دانش علی نے بیان پرسخت اعتراض بھی ظاہرکیا۔ انہوں نے سوشل میڈیا ایکس پر لکھا، ”کیا آرایس ایس کی شاکھاؤں اورنریندر مودی جی کی لیبارٹری میں یہی سکھایا جاتا ہے؟ آپ کا کیڈر جب ایک منتخب ہوئے رکن پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ میں… ایسے توہین آمیز الفاظ کہنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتا تو وہ عام مسلمانوں کے ساتھ کیا کرتا ہوگا؟ یہ سوچ کربھی روح کانپ جاتی ہے۔‘‘


دانش علی نے خط میں کہا کہ میں آپ کو (لوک سبھا اسپیکر) کو یہ بات گہرے درد کے ساتھ لکھ رہا ہوں۔ میرے خلاف چندریان-3 کی کامیابی پر بحث کے دوران تبصرہ کیا گیا۔ نئے پارلیمنٹ میں ہوا یہ حادثہ دل توڑنے والا ہے۔ وہ اقلیتی طبقے سے آنے والے ایک منتخب عوامی نمائندہ ہیں۔

کنوردانش علی نے کہا کہ وہ رمیش بدھوڑی کے خلاف ضابطہ 222, 266 اور 227 کے تحت نوٹس دینا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا، ”میں آپ سے گزارش کرتا ہوں کہ ضابطہ 227 کے تحت اس معاملے کو خصوصی استحقاق کمیٹی کے پاس بھیجا جائے۔ میری گزارش ہے کہ اس معاملے میں جانچ کا حکم دیا جائے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ اس معاملے میں کارروائی ضروری ہے تاکہ ملک کا ماحول مزید خراب اورآلودہ نہ ہو۔

واضح رہے کہ بی جے پی رکن پارلیمنٹ رمیش بدھوڑی نے گزشتہ روزپارلیمنٹ کے ایوان کو شرمسارکردیا ہے۔ رمیش بدھوڑی نے بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) رکن پارلیمنٹ اور سینئر مسلم لیڈر کنوردانش علی کے خلاف نازیبا الفاظ کا استعمال کیا۔ انہوں نے مسلم مخالف الفاظ کا بھی استعمال کیا۔ رمیش بدھوڑی نے تمام حدیں پارکرتے ہوئے مذہب پرمبنی نازیبا تبصرہ کیا۔ بی جے پی ایم پی رمیش بدھوڑی نے جن الفاظ کا استعمال لوک سبھا میں کیا ہے، اس کو یہاں نہیں لکھا جاسکتا۔ جنوبی دہلی سے بی جے پی رکن پارلیمنٹ رمیش بدھوڑی نے جب انتہائی نازیبا الفاظ کا استعمال لوک سبھا میں کیا اس وقت سینئربی جے پی رکن پارلیمنٹ اور سابق مرکزی وزیر ہرش وردھن سنگھ ویڈیو میں مسکراتے ہوئے نظرآئے۔