Friday, July 19, 2024
homeاہم خبریںظالمین اللہ کی پکڑ سے محفوظ نہیں رہ سکتے ہیں :میدان عرفات...

ظالمین اللہ کی پکڑ سے محفوظ نہیں رہ سکتے ہیں :میدان عرفات سے امام حرم کا پیغام

مکہ المکرمہ(انصاف نیوز آن لائن)
مسجد الحرام کے امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد القیلی نے آج میدان عرفاف میں واقع مسجد نمرہ خطبہ حج میں کہا کہ جو لوگ ظلم کرتے ہیں وہ اللہ کی پکڑ سے بچ نہیں سکتے ہیں ۔انہوں نے خطبہ حج میں کہا ہے کہ اے لوگو، اللّٰہ اور اس کے رسولﷺ کی اطاعت کرو، قرآن کہتا ہے جو ظلم کرتا ہے اس کی پکڑ ہوگی۔

آج حجاج کرام حج کے سب سے بڑے رکن وقوف عرفہ ادا کررہے ہیں ۔فجرکی نماز کے بعد سے ہی منی سے حجاج کرام عرفات کیلئے روانہ ہوگئے تھے۔اس سال 20لاکھ کے قریب حجاج کرام حج ادا کررہے ہیں جس میں بھارت سے ایک لاکھ سے زائد حجاج کرام بھی شامل ہیں ۔سعودی حکومت نے بے مثال سیکورٹی کا انتظام کیا ہے۔


مسجد نمرہ سے خطبہ حج دیتے ہوئے مسجد الحرام کے امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد نے کہا کہ اللّٰہ تعالیٰ نے اپنے پیغمبر ﷺ کے احکامات پر عمل درآمد کا حکم دیا ہے، رسولﷺ کی اتباع کرنے والوں نے ہمیشہ ہدایت پائی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اللّٰہ پر توکل کرنے والوں کو دنیا اور آخرت میں کامیابی ملتی ہے، اللّٰہ کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں، شیطان کے دھوکوں اور وسوسوں سے خود کو محفوظ رکھو، ارکان اسلام کی پیروی میں ہی ہدایت موجود ہے۔
خطبہ حج میں کہا گیا کہ اللّٰہ تعالیٰ نے دین اسلام کو لوگوں کے لیے پسند کیا ہے، اے لوگو! مصیبتوں اور فساد سے دور رہو، اللّٰہ تعالیٰ نے نبی کریم ﷺ کو رحمت بنا کر بھیجا، اسلام فحاشی اور برائی سے منع کرتا ہے، اسلام امانت میں خیانت سے منع کرتا ہے، کسی کا حق مت کھاؤ، شراب اور جوا شیطانی عمل ہے، جو مومنوں کو تکلیف دیتے ہیں کبھی فلاح نہیں پاسکتے، ایک دوسرے سے تعاون کرو، مدد کا جذبہ قائم کرو، اللّٰہ تعالیٰ گناہ معاف کر کے درجات بلند کرنے والا ہے۔

امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد کا کہنا ہے کہ تمام تعریفیں اللّٰہ تعالیٰ کے لیے ہیں، اللّٰہ تعالیٰ نے تفرقہ ڈالنے سے منع کیا ہے، تقویٰ اختیار کرنا چاہیے، کبھی بھی کسی معاملے پر کسی دوسرے معبود کو نہ پکارا جائے، مصیبت اور پریشانی میں اللّٰہ تعالیٰ سے رجوع کرنا چاہیے، حاکمیت اور حقیقی حکمرانی اللّٰہ تعالیٰ کی ذات کی ہے، اللّٰہ کی نافرمانی کرنے والا جنت میں داخل نہیں ہو سکتا، انسان اللّٰہ سے ڈر کر زندگی بسر کرے، ان باتوں سے رکنا چاہیے جس میں اللّٰہ کی ناراضی ہے۔

مسجد الحرام کے امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد نے خطبہ حج میں کہا ہے کہ اے لوگو، اللّٰہ اور اس کے رسولﷺ کی اطاعت کرو، قرآن کہتا ہے جو ظلم کرتا ہے اس کی پکڑ ہوگی۔

مکہ مکرمہ میں حج کا رکن اعظم وقوف عرفات ادا کر دیا گیا ہے، ایک لاکھ 60 ہزار پاکستانیوں سمیت 20 لاکھ سے زائد عازمین نے حج کا رکن اعظم ادا کیا۔

مسجد نمرہ سے خطبہ حج دیتے ہوئے مسجد الحرام کے امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد نے کہا کہ اللّٰہ تعالیٰ نے اپنے پیغمبر ﷺ کے احکامات پر عمل درآمد کا حکم دیا ہے، رسولﷺ کی اتباع کرنے والوں نے ہمیشہ ہدایت پائی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اللّٰہ پر توکل کرنے والوں کو دنیا اور آخرت میں کامیابی ملتی ہے، اللّٰہ کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں، شیطان کے دھوکوں اور وسوسوں سے خود کو محفوظ رکھو، ارکان اسلام کی پیروی میں ہی ہدایت موجود ہے۔

خطبہ حج میں کہا گیا کہ اللّٰہ تعالیٰ نے دین اسلام کو لوگوں کے لیے پسند کیا ہے، اے لوگو! مصیبتوں اور فساد سے دور رہو، اللّٰہ تعالیٰ نے نبی کریم ﷺ کو رحمت بنا کر بھیجا، اسلام فحاشی اور برائی سے منع کرتا ہے، اسلام امانت میں خیانت سے منع کرتا ہے، کسی کا حق مت کھاؤ، شراب اور جوا شیطانی عمل ہے، جو مومنوں کو تکلیف دیتے ہیں کبھی فلاح نہیں پاسکتے، ایک دوسرے سے تعاون کرو، مدد کا جذبہ قائم کرو، اللّٰہ تعالیٰ گناہ معاف کر کے درجات بلند کرنے والا ہے۔

امام و خطیب شیخ ڈاکٹر ماہربن حمد کا کہنا ہے کہ تمام تعریفیں اللّٰہ تعالیٰ کے لیے ہیں، اللّٰہ تعالیٰ نے تفرقہ ڈالنے سے منع کیا ہے، تقویٰ اختیار کرنا چاہیے، کبھی بھی کسی معاملے پر کسی دوسرے معبود کو نہ پکارا جائے، مصیبت اور پریشانی میں اللّٰہ تعالیٰ سے رجوع کرنا چاہیے، حاکمیت اور حقیقی حکمرانی اللّٰہ تعالیٰ کی ذات کی ہے، اللّٰہ کی نافرمانی کرنے والا جنت میں داخل نہیں ہو سکتا، انسان اللّٰہ سے ڈر کر زندگی بسر کرے، ان باتوں سے رکنا چاہیے جس میں اللّٰہ کی ناراضی ہے۔

خطبہ حج کا ترجمہ اردو سمیت 50 زبانوں میں نشر کیا گیا۔

خطبہ حج کے بعد حجاج نے نماز ظہر اور عصر کی قصر ادا کی، حجاج غروب آفتاب ہوتے ہی مزدلفہ روانہ ہوں گے، جہاں نماز مغرب اور عشاء قصر ادا کریں گے اور رمی کے لیے کنکریاں اکٹھی کریں گے۔

اس سے قبل عازمین حج مناسک حج کے اگلے مرحلے میں میدان عرفات پہنچے تھے، عرفات میں فضا کو ٹھنڈا رکھنے کے لیے فواروں کا استعمال کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ حج کی سعادت کے لیے دنیا بھر سے آئے 20 لاکھ عازمین حج میں ایک لاکھ 60 ہزار پاکستانی بھی شامل ہیں۔
خطبہ حج کا ترجمہ اردو سمیت 50 زبانوں میں نشر کیا گیا۔

خطبہ حج کے بعد حجاج نے نماز ظہر اور عصر کی قصر ادا کی گئی، حجاج غروب آفتاب ہوتے ہی مزدلفہ روانہ ہوں گے، جہاں نماز مغرب اور عشاء قصر ادا کریں گے اور رمی کے لیے کنکریاں اکٹھی کریں گے۔

اس سے قبل عازمین حج مناسک حج کے اگلے مرحلے میں میدان عرفات پہنچے تھے، عرفات میں فضا کو ٹھنڈا رکھنے کے لیے فواروں کا استعمال کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ حج کی سعادت کے لیے دنیا بھر سے آئے 20 لاکھ عازمین حج آئے ہوئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

تازہ ترین